jump to navigation

Likhnay wale amliyat k bunyadi usool January 17, 2018

Posted by rohaniyat in Aurato Ke Masa'il, Court Muqadamat, Dream meaning, istikhara, Jinn, mujarab totkay, Rohani Amliyat/wazaif/mujaribat, Rohani Articles, Shadi Aur Rishte, Uncategorized.
Tags: , , , , , , , , , ,
trackback

لکھنے والے اعمال سے مراد تعویذات نقوش اور طلاسم وغیرہ ہے جن کے لیے مندرجہ ذیل اصولوں کو کم از کم تب تک اپنایا جاۓ جب تک اس عمل کی روحانیت آپ سے مانوس نا ہوجاۓ اسی طرح اگر دس سے زائد کسی بھی ترکیب کے استعمال سے کامیابی ملے تو اسکا مطلب اس ترکیب کی روحانیت آپ سے مانوس ہوگئی ہے اور اب آپ اس ترکیب کو بلا پابندی شرائط کرسکتے ہیں.  جہاں بھی آپ لکھنے والا عمل کریں وہ پاک صاف ہو اور آپ خود بھی پاک و صاف ہوں اورطبہتر یہ ہے کہ لکھتے وقت آپ کے ارد گرد کوئی اور شخص نا ہو یعنی تنہا عمل کریں اس سے آپکی توجہ مرکوز رہتی ہے اسکے علاوہ آپ خود کی اور جگہ کی طہارت کی تو ضمانت دے سکتے ہیں لیکن حاضر شخص کی نہیں  اسکے علاوہ لکھتے وقت مکمل طور پر متوجہ رہیں اور سنجیدہ رہیں اور فالتو کے لایعنی خیالات سے اجتناب کریں اور شروعات میں حب کے اعمال اگر کرتے ہیں تو آتشی کریں یعنی ایسی جگہ پر رکھیں جہاں انکو حرارت اور تپش تو ملے لیکن جلے نہیں اسی طرح ضرر اور کسی کو نقصان پہچانے کے اعمال بھی آتشی ہوں جنکو مندرجہ بالا طریقے سے استعمال کیا جائے اور اگر قضاۓ حاجت یا ضرورت کے اعمال ہوں تو چلتے پانی میں پھینک دیں اور  اگر دو لوگوں میں جھگڑا اور نفاق ڈالنے کی نوعیت کے ہوں تو زمین میں دفنانے والے اعمال کریں اور اگر دو افراد میں صلح اور اتفاق کے لیے ھوا میں لٹکانے والے اعمال اور یاد رکھیں اپنے آپ کا دوسروں  کے ساتھ موازنہ نا کریں کہ فلاں شخص تو ایسا ایسے وقت میں کرتا ہے تو ایسا ہوجاتا ہے وغیرہ وغیرہ تو میرے بھائی وہ اس درجے پر فورا نہیں پہنچا بلکہ کچھ وقت تک وہ بھی انھی جیسے ملتے جلتے اصولوں کی پابندی میں گزار چکا ہوگا.  غالبا تمام اعمال لکھنے والے کاغذ پر لکھ کر کیے جاتے ہیں جس میں کوئی لکیریں یا کسی قسم کی لکھائی نا ہو بلکل کورا کاغذ  لیکن دھیان رہے کہ اس کاغذ کا کچھ حصہ کسی اور عمل کے لیے پہلے استعمال نا ہوا ہو یعنی بہت سے لوگ بغض کا عمل لکھتے ہیں اور بچے ہوۓ حصے کو الگ کرکے اس پر حب یا دوسرا عمل کرتے ہیں جوکہ غلط ہے اگر کوئی حصہ بچ جاتا ہے تو کسی اور عمل کے لے استعمال نہ کریں بلکہ عملیات کے علاوہ مقاصد میں استعمال کریں اور  ناہی کاغذ کو ناپاک جگہ اور بدبودار اشیاء کے قریب رکھا جاۓ  اس کا اطلاق دھاتوں پر بھی ہوتا ہے جس پر اعمال لکھے جاتے ہیں اور لکھنے والے اعمال اکثریت میں زعفران اور عرق گلاب کی سیاھی سے لکھے جاتے ہیں اور بہتر اور اولی یہ ہے کہ زیتون کی لکڑی کا قلم تیار کیا جاۓ اور  اسی سے اعمال لکھے جائیں اور لکھنے سے پہلے : کہیعص حمعسق والقلم ومایسطرون پڑھکر لکھا جاۓ جو بھی لکھنا ہے 

یہ ایک مختصر اور بنیادی بیان تھا لکھے جانے والے اعمال کی بابت اللہ تعالی سے دعا ہے کہ ہم سب کے لیے آسانی والا معاملہ فرماۓ اور ہمیں دوسروں کے لیے آسانیاں پیدا کرنے کا وسیلہ بنائے آمین بجاہ النبی الامین

طالب دعا

یاسین قادری 

Advertisements
%d bloggers like this: